اُردُولُغت

اردو ذخیرہ الفاظ

آن لائن اردو لغت مفصل تلاش کے ساتھ

اردوکلاسیکل ادب زندہ ہے

اردوکلاسیکل ادب زندہ ہے

قدیم ہندوستانی راجواڑوں میں نوخیز دوشیزاؤں کو کتخدائی اور سوئمبر سے قبل عجیب وغریب رسومات سے گزرنا پڑتاتھا۔ پشتینی خادمائیں خاندانی خفیہ نسخوں کی مدد سے اناجوں، سوکھے پھولوں، پھلوں، بیجوں، نباتات کی چھٹک پھٹک اورحیوانات کے دودھ، چربیوں کی آمیزش سے وہ نادر حسن بخش، تازگی اور ناز کی عطا کرنے والے ابٹن بناتیں جو حسنِ نوخیزاں کو مزید چار چاند لگادیتے۔

ہنسے تو پھنسے

ہنسے تو پھنسے

پر ہمیشہ ترجیح دیتا چلا آیا ہے۔ ہماری شاعری نوے فیصد افسردگی، اداسی اور رنج و الم سے مزیں ہے۔ کہیں فکر معاش ہے تو کہیں فکر فردا۔ رہی سہی کسر محبوب کے ہجر و وصال نے یوں پوری کر دی ہے کہ محبوب کے قدموں میں بیٹھ کر آٹھ آٹھ آنسو بہائے بنا ہمارے شاعروں کے دل کو نہ دن کا چین میسر ہے، نہ رات کا آرام۔ پھر تقدیر کے شکوے نالے سے دل کے پھپھولے پھوڑنے کے بعد ظالم سماج اور رقیب روسیاہ کے رونے شروع کیے جاتے ہیں۔۔۔

باجن دے باجنتری، سوئ پڑی نہ چھیڑ

باجن دے باجنتری، سوئ پڑی نہ چھیڑ

اگر مردوں کی بنائ دنیا کو درست کرنا ہے اور عورتوں کو ان کا اصل حق دینا ہے تو سب سے پہلے زبان اور زبان درازی درست فرمائ جائے۔
فیروز اللغات سمیت اب تو اردو کی ہر لغت بھی درست کرنا پڑے گی۔
خواتین کی بے حرمتی کرتے سارے محاورے، ضرب الامثال، روزمرہ، کہاوتیں کان پکڑ پکڑ کر نکالنے ہوں گے یا نگوڑی مرد جاتی پر تھوپ دینے ہوں گے۔۔۔