اُردُولُغت

اردو ذخیرہ الفاظ

آن لائن اردو لغت مفصل تلاش کے ساتھ

https://www.urdulughat.pk/Post/char-shayer

چار شاعر

چار شاعر

 

چار شاعر شراب کے ایک پیالے کے گرد بیٹھے تھے جو ایک میز پر پڑا تھا۔

پہلے نے کہا: میرا خیال ہے کہ میں اپنی تیسری آنکھ سے  اس شراب کی مہک کو وسعت پر ایسے منڈلاتے ہوئے دیکھ رہا ہوں جیسے کسی سحر زدہ جنگل پر  پرندوں کا جھلر۔

دوسرے شاعر نے اپنا سر اٹھایا  اور کہا:  میں اپنے باطنی کان سے ان موہوم پرندوں کا گاتے ہوئے سن رہا ہوں، اور ان کا نغمہ میرے دل کو یوں تھامے ہوئے ہے، جسے سفید گلاب شہد کی مکھی کو اپنی پنکھڑیوں  میں قید کر لیتا ہے۔

تیسرے شاعر نے آنکھیں بند کرکے اور آسمان کی طرف بازو پھیلاتے ہوئے کہا: میرا ہاتھ انہیں چھو رہا ہے، اور  میں ان پرندوں کے پروں کو محسوس کر رہا ہوں۔ جیسے محو خواب حسن کی سانس میری انگلیوں سے ٹکرا رہی ہو۔

تب چوتھا اٹھا اور پیالے کو بلند کرتے ہوئے کہا: افسوس! دوستو میں تمہاری طرح دیکھنے، سننے ، اور چھونے کی ان صلا حیتوں سے اس قدر محروم ہوں۔ کہ میں اس شراب کی مہک نہیں دیکھ سکتا،اور نہ موہوم پرندوں کا کوئی نغمہ سن سکتا ہوں ،اور نہ انکے پروں کی پھڑ پھڑاہٹ ہی محسوس کر سکتا ہوں۔۔۔۔۔ میں صرف شراب دیکھتا ہوں۔۔۔ صرف شراب۔۔۔۔۔ اور مجھے  اب اسے پینا ہی ہوگا۔ تاکہ اس سے میرے حواس میں بھی تیزی پیدا ہوجائے اور میں تمہارے تخیل کی بلندیوں تک پہنچ سکوں۔

اور پیالے کو اپنے لبوں سے لگاتے ہوئے وہ شراب کی تلپھٹ تک پی گیا۔

تینوں شاعر حیرت سے اس کی طرف دیکھنے لگے۔ ان کی آنکھوں میں ایک غیر شاعرانہ اور پیاسی نفرت تھی۔

ملتے جلتے آرٹیکلز