اُردُولُغت

اردو ذخیرہ الفاظ

آن لائن اردو لغت مفصل تلاش کے ساتھ

https://www.urdulughat.pk/Post/tarak-ul-dunia

تارک الدنیا

تارک الدنیا

 

میں جوانی  کے عالم میں ایک مرتبہ ایک تارک الدنیا  شخص سے ملا۔ جو پہاڑیوں سے پرے ایک خاموش اور پر سکون وادی میں رہتا تھا۔ ہم نیکی کی حقیقت پر گفتگو کر رہے تھے،  کہ ایک تھکا ماندہ ہوا ڈاکو پہاڑی سے لنگڑاتا ہوا آیا۔ جب وہ کنج کے پاس پہنچا تو درویش کے سامنے جھکا اور بولا : سائیں بابا کیا مجھے آرام ملے گا؟ میں گناہوں سے دبا ہوا ہوں۔

درویش نے جواب دیا: میں خود اپنے گناہوں سے دبا ہوا ہوں۔

ڈاکو نے کہا: لیکن میں چور اور لٹیرا ہوں۔

درویش نے جواب دیا میں خود بھی ایک چور اور لٹیرا ہوں۔

داکو نے کہا: لیکن میں ایک خونی ہوں ، لاتعداد انسانوں کا خون میرے کانوں میں چیخ رہا ہے۔

درویش بولا : میں خؤد ایک قاتل ہوں،  اور بے شمار انسانوں کا خون میرے کانوں میں چیخ رہا ہے۔

ڈاکو نے کہا: میں نے ان گنت جرم کئے ہیں۔

درویش کہنے لگا : میں نے خود بھی لاتعداد جرم کئے ہیں۔

تب وہ ڈاکو اٹھ کھڑا ہوا ۔ اور درویش کو دیکھا ، اس کی آنکھوں میں ایک عجیب سی تھکاوٹ تھی۔ اور جب وہ ہم سے الگ ہوا  تو وہ پہاڑی سے جست لگاتا گیا۔میں درویش سے مخاطب ہوا اور کہا: آپ نے خود کو ناکردہ گناہوں کا مجرم کیوں ٹھہرایا۔کیا آپ کا یہ خیال نہیں کہ یہ آدمی آپ سے بد ظن ہوکر گیا ہے۔

درویش نے جواب دیا: یہ درست ہے کہ اب اسے مجھ پر اعتقاد نہیں رہا  لیکن وہ یہاں سے بے حد مطمئن گیا ہے۔اس وقت ہم نے ڈاکو کو کچھ فاصلے پر گاتے ہوئے سنا ۔ اس کے گیت کی گونج وادی کو مسرت سے لبریز کر رہی تھی۔

ملتے جلتے آرٹیکلز